Urdu Social Media Summit 2015

تجزیے، تبصرے اور اعدادوشمار

مزید
javed-inzi-younis-yousuf

پاکستان کی تاریخ کے عظیم ترین بلے باز

پاک سرزمین تیز باؤلنگ کے لیے زرخیز تصور کی جاتی ہے، اور یہ بات خاصی حد تک درست بھی ہے۔ فضل محمود سے لے کر شعیب اختر تک، تیز گیندبازوں کی ایک طویل فہرست ہے جنہوں نے عرصے تک حریف بلے بازوں پر اپنی دہشت بٹھائے رکھی۔ اس کے مقابلے میں پاکستان کے پاس مستقل مزاجی کے ساتھ کارکردگی دکھانے والے بلے بازوں کی اکثر و بیشتر کمی رہی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ عالمی سطح پر لیجنڈ تسلیم کیے جانے والے پاکستانی بلے باز خال خال ہی ملتے ہیں۔ پاکستان کی پوری ٹیسٹ کرکٹ تاریخ پر نظر ڈالیں تو ہمیں تواتر کے ساتھ اور لمبے عرصے تک رنز کے انبار لگانے والے صرف چار بلے باز ہی ملتے ہیں، ایک جاوید میانداد، دوسرے انضمام مزید پڑھیے

Pakistan v Sri Lanka: Group A - 2011 ICC World Cup

وقار کی ”واپسی“، پاکستان کو راس نہیں آئی؟

دنیا آگے کا سفر کررہی ہے، حالانکہ بنگلہ دیش بھی اب دنیا کی بڑی ٹیموں کے حلق کا کانٹا بنتا جارہا ہے اور عالمی کپ میں انگلستان کے خلاف کامیابی حاصل کرکے کوارٹر فائنل بھی کھیل چکا ہے لیکن پاکستان شاید دنیا کا واحد ملک ہوگا جس کی کرکٹ سالوں سے الٹے قدموں جارہی ہے۔ بالخصوص ایک روزہ کرکٹ میں تو پاکستان گزشتہ کئی سالوں سے مسلسل زوال پذیر ہے۔ وجہ؟ ناقص منصوبہ بندی، جدید دور کے تقاضوں سے ہم آہنگ نہ ہونا اور جارحانہ کرکٹ سے دامن بچانا ہے۔ اس میں فرد، یا افراد، کا کتنا کردار ہے، اس بارے میں فی الحال کچھ کہنا مناسب نہیں۔ ہاں، یہ ضرور کہا جا سکتا ہے کہ کوچ وقار یونس اور پاکستان کا قسمت کنکشن نہیں مزید پڑھیے

Bangladesh-team

دیوانے کا خواب حقیقت بن گیا

چٹ پٹ طے کی گئی پاک-بنگلہ سیریز سے قبل جب آل راؤنڈر شکیب الحسن نے کہا تھا کہ بنگلہ دیش 'فیورٹ' ہوگا تو مجھ سمیت کئی لوگوں نے ان کا مذاق اڑایا تھا۔ آخر 16 سال سے بین الاقوامی کرکٹ میں پاکستان کے خلاف ایک فتح کو ترسنے والا بنگلہ دیش کیسے جیت سکتا ہے؟ وہ بھی عالمی کپ کا بہترین اسپیل پھینکنے والے وہاب ریاض، جنوبی افریقہ کے چھکے چھڑا دینے والے سرفراز احمد، پاکستان کے باصلاحیت ترین گیندباز جنید خان، 'جادوگر' سعید اجمل، قابل بھروسہ بلے باز محمد حفیظ، مصباح الحق کے 'جانشین' فواد عالم، نپی تلی گیندبازی کرنے والے راحت علی اور نئے لیکن باحوصلہ کپتان اظہر علی سے؟ پہلا ردعمل تو یہی تھا کہ "سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔" لیکن صرف مزید پڑھیے

azhar-ali

ڈیڑھ سال بیت گیا، پاکستان شکست سے دامن نہیں چھڑا سکا

ہم جسے ناممکنات میں سے ایک سمجھتے تھے، اب حقیقت کا روپ دھار کر ہمارے سامنے کھڑا ہے۔ بنگلہ دیش کے مقابلے میں دنیا کی سب سے بڑی قوت پاکستان بالآخر مقابلہ ہی نہیں بلکہ سیریز بھی ہار گیا۔ ایک ایسی ٹیم جس کے خلاف 16 سالوں میں بنگلہ دیش کوئی ٹیسٹ، کوئی ون ڈے یہاں تک کہ کوئی ٹی ٹوئنٹی تک نہیں جیت پایا تھا، اب مسلسل دو شکستوں کے بعد اپنے زخم چاٹ رہی ہے۔ لیکن یہ کیسے ممکن ہوا؟ بنگلہ دیش کی انتھک محنت اور لگن سے، جدوجہد سے، یقینِ کامل اور امیدِ واثق سے۔ اُس نے پاکستان کی ہر ہر کمزوری کا فائدہ اٹھایا اور ظفرمند ثابت ہوا جبکہ پاکستان نے ہر اس غلطی کا اعادہ کیا، جو اسے نہیں کرنی مزید پڑھیے